Editor’s Note

BIJUL2015_Page_05_Image_0002Being a Baloch journalist I would not hesitate to say that Balochistan is the most difficult region for journalists. On one hand it is also neglected at a national level like in other fields and on the other side the performing of independent journalistic duties here is not less than any facing any danger.

Despite facing all difficulties, I am lucky enough that readers of my region always gave me courage and love and issuance of this magazine is a small effort due to this encouragement.

It is an effort to bring together new and seasoned journalists with innovation, where readers, who belong to Balochistan and outside world, could be provided political, social, societal, economical and cultural information.

I don’t know how much I would be successful in my objective but all of these my efforts are dedicated to the people of my region.

Editor

Tania Baloch

مدیر کا پیغام

بحیثیت بلوچ صحافی مجھے یہ کہنے میں قطعی ہچکچاہٹ نہیں ہوگی کہ بلوچستان صحافیوں کے لئے ایک مشکل ترین خطہ ہے۔ ایک طرف یہ شعبہ بلوچستان کے دیگر تمام شعبوں کی طرح ملکی سطح پر مسلسل نظر انداز کیا جاتا ہے تو دوسری طرف یہاں آزادانہ طور پر صحافتی ذمہ داری انجام دینا کسی خطرے سے کم نہیں ہے ۔

ان تمام مشکلات کے باوجود میری یہ خوش قسمتی رہی ہے کہ میرے خطے کے قارئین نے مجھے ہمیشہ بہت حوصلہ اور اپنائیت دی اور اسی حوصلے کی وجہ سے اس جریدے کا اجراء ایک چھوٹی سی کوشش ہے۔ ایک ایسی کوشش جہاں جدت کے ساتھ ساتھ نئے اور سینئر صحافیوں کو اکھٹا کیا جا سکے اور جہاں بلوچستان اور اس سے باہر رہنے والے قارئین کو اس خطے کی سیاسی، سماجی، معاشرتی، معاشی اور ثقافتی معلومات فراہم کی جا سکیں۔

میں نہیں جانتی کہ میں اپنے مقصد میں کس حد تک کامیاب ہو پاؤں گی مگر میری یہ تمام کاوشیں میرے خطے میں رہنے والے لوگوں کے نام ہیں۔

مدیر
تانیہ بلوچ